تصویر بےزبان – تو اگر سن نہیں پاتا، تو غور سے دیکھ, بات ایسی ہے کےدھورائی نہیں جائے گی

BREAKING NEWS( I sincerely apologize to my worthy readers who do not understand Urdu, some Urdu admirers were insisting my complete Urdu post )

میرا یہ معمولی سا بلاگ اور میری کوشش میرے اندر دفن سوچوں اورتجربات  کی منظر کشی کو کہا جا سکتا ہے  . انٹرنیٹ ایک عجیب ایجاد ہے جو چاہے لکھ دو اور جو چاہے لائک کر لو اور بغیر کسی پابندی کے لکھتے جاؤ

 ایک مکمل بے یقینی اور خوف سے بھرپور احساس کے ساتھ میں آپکو اِس بلاگ کی پہلی اُرْدُو پوسٹ پیش کر رہا ہوں . اپنی اُرْدُو کی سنگین کمزوریوں کے باوجود میری یہ نڈر اور حقیر پیشکش کو مجھے ایک دیوانہ اوردل  لاچار  سمجھ کر خدارا نظرانداز کیجیۓ.

میری ڈیجیٹل فوٹوگرافی کو میں  نے اُرْدُو شاعری کے ساتھ سادگی سے فریم کیا ہے ، چاہیں تو اسے اپنے دِل کے کسی بِیابان اور خاموش اجاڑ سے تیخانے میں رکھ دین یا پِھرردی  والے کو بخش دین .

 

چمن میری امیدوں کا خزاں رسیدہ ہے
کہاں ہو اے بہاروں اب تو آؤ تمREDوہ ستارہ ہے چمکنے دو آنکھوں میں
کیا ضرورت ہے اسے جسم بنا کے دیکھوںRED COMITچل اکیلا ، چل اکیلا ، چل اکیلا
تیرا میلا پیچھے چھوٹا راہی چل اکیلاRED CAPبڑے خلوص سے دعوت تو اس نے بھیجی
پر اسکی بزم میں آنا عجیب لگتا ہےPerspectiveنازکی اسکے لب کی کیا کہیہ 
پنکھڑی اک گلاب سی ہےPAINT ME REDمیں پھول چنتی رہی اور مجھے خبر نہیں ہوئی
وہ آ کے میرے شہر سے چلا بھی گیاMY ROSE GARDENآج قاتلوں کی محفل سجا کے بیٹھا ہوں
ہے تجھے بھی دعوت بےنقاب آنے کیMURDER SCENEقاصد کے آتے آتے خط اک اور لکھ
میں جانتا ہوں جو وہ لکھیں گے جواب LETTERSیاد کے چاند دل میں اترتے رہے
چاندنی جگمگاتی رہے رات بھرFLOATING GLASSوقت کرتا جو وفا آپ ہمارے ہوتے
ہم بھی اوروں کی ترہا آپ کو پیارے ہوتےGREEN CLOCKجس باغ میں سبھ کو جاتی ہو
جس سبزے پر تم چلتی ہو
جو شاخ تمھیں چھو جاتی ہے
جو خوشبوتم کو بھاتی ہے
وہ اوس تمھارے چہرے پر
جو کترا کترا گرتی ہےGARDNER

یہ شام اور تیرا نام دونوں کتنے ملتے جلتے ہیں
تیرا نام نہیں لونگا، نہیں لونگا، بس تجھ کو شام کہوں گاHAYDAYS

جس گلی میں تیرا گھر نہ ہو بالما
اس گلی سے ہمیں تو گزرنا نہیں
جو گلی تیرے دوارے پے جاتی نہ ہو
اس گلی سے ہمیں تو گزرنا نہیںHOME

اے ماں، مجھے پھر سے میرا بستہ دے دے
کے دنیا کا دیا سبق مشکل بہت ہےHOMEAGE

وہ شخص خزاں رت میں بھی محتاط ہے کتنا
سوکھے ہوے پھولوں کو بکھرنے نہیں دیتاLAMP 6

یہ وادیاں یہ فضائیں بلا رہی ہے تمھیں
خموشیوں کی صدائیں بلا رہی ہے تمھیں
تمہاری زلفوں سے خوشبو کی بھیک لینے کو
جھکی جھکی سی گھٹائیں بلا رہی ہے تمھیںFAR AWAY

خزاں رکھے گی درختوں کو بے ثمر کب تک
گزر ہی جائے گی یہ رت بھی حوصلہ رکھناDRY BUT ELEGANT

گھر سے نکل کھڑے ہوے پھرپوچھنا ہی  کیا
منزل کہاں سے پاس پڑے گی کہاں سے دورDecision Making

وہ ہے بزم میں اتنا تو میر نے دیکھا
پھر اسکے بعد چراغوں میں روشنی نہ رہیCANDLE

دوست دوست نہ رہا، پیار پیار نہ رہا
زندگی مجھے تیرا اعتبار نہ رہا، اعتبار نہ رہاA FRIEND IN NEED

آج منزل پے کھڑا ہے وہ نئی شان کے ساتھ
تم ہنستے تھے جس رستے میں گرا کے لوگوں کوShadows

اسے تراش کے ہیرا بنا دیا ہم نے فراز
مگر اب یہ سوچتے ہیں اسے خریدیں کیسےSTAR TREK

تیری تصویر سے مانوس ہیں آنکھیں میری
میں کسی اور کو دیکھوں بھی تو دیکھوں کیسےSUPERIOR GLASS

کاش میں لوٹ جاؤں بچپن کی وادی میں
نہ کوئی ضرورت تھی، نہ کوئی ضروری تھاTAKE ME THEIR AGAIN

شراب پینے دے مسجد میں بیٹھ کر
یا وہ جگہ بتا جہاں خدا نہیں THE OLDEST

تو خدا ہے نہ میرا عشق فرشتوں جیسا
دونوں انسان ہیں تو کیوں اتنے حجابوں میں ملیںTRANQUALITY

 میری یہ کوشش بھی شاید میری اردو کی خامیوں کو چھپا نہ سکے.لاہور کے ایک نامی گرامی اردو میڈیم اسکول میں پڑھنے کے باوجود میں اردو میں کبھی اچھے نمبر نہ لے سکا، لیکن اس کا ہر گز یہ معنے نہیں کے میں اردو سے دور رہنا چاہتا ہوں.

تمام اوپر پوسٹ کی گئی تصاویر میری اپنی فوٹو گرافی ہے اور اشعار مختلف شعرا کے بغیر انکی اجازت کے لیے گئے ہیں. میرا ایک دوست کہتا رہا کے کچھ مختلف لکھو اور وو بھی اردو میں، میں تمام تحریر اردو میں تو نہ لکھ سکا، اسی لیے مجھے اپنی فوٹو گرافی کا سہارا لینا پڑا…

اب یہ پوسٹ آپکے حوالے کی جاتی ہے….

وہ سمجھ نہ پائیں گے جو ہم تحریر کرتے ہیں
ہم احساس لکھتے ہیں وہ الفاظ پڑھتے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *


*